مداخلت

اُس نے مجھے خواب میں آواز دی

ساعتوں نے محسوس کرکے

اُس اجنبی آواز کو پہچانا

یقین اور گماں کے دوراہے پہ

 صدیوں سے منتظر کھڑے

جذبات نے جنبش کی

حواسوں نے مداخلت کرکے

سب ختم کردیا

اقصیٰ انعم شیخ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here